Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ سندھ کراچی کی ترقی میں دلچسپی لے رہے ہیں وزیراعلیٰ سندھ بھی کراچی کی ترقی کے لیے درد رکھتے ہیں  
     
  06-Oct-2017  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ سندھ کراچی کی ترقی میں دلچسپی لے رہے ہیں مجھے پیسے سے نہیں مسائل کے حل میں دلچسپی ہے میں مراد علی شاہ سے تعلقات خراب نہیں کروں گا میرا کوئی بھی ہاتھ پکڑے میں تیار ہوں ، کورنگی پانچ ہزار روڈ کی شکایات تھیں علاقے کا دیرینہ مسئلہ تھا، گرین بیلٹ بھی بنائیں گے، جن علاقوں کی سڑکیں اور سیوریج کے مسائل ہیں انہیں پہلے حل کرینگے، لانڈھی میں سیوریج کی بڑی لائن کا مسئلہ جلد حل کرینگے واٹربورڈ کو اپنا سمجھتے ہیں، پچھلا بجٹ حکومت سندھ نے دیا تھا، وزیراعلیٰ سندھ بھی کراچی کی ترقی کے لیے درد رکھتے ہیں یہ بات انہوں نے کورنگی میں 2 کروڑ روپے کی لاگت سے پانچ ہزار فٹ روڑ کی کارپیٹنگ کے کام کے معائنے کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی، ممبر صوبائی اسمبلی عامر معین پیرزادہ، وائس چیئرمین ضلع کورنگی سید احمر علی، یوسی 36 کے چیئرمین فیضان،یوسی 33 کے چیئرمین اسحق میو ٔاور دیگر بھی ان کے ہمراہ تھے۔میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ چالیس روز قبل اس سڑک کابرا حال تھا سڑک کی تعمیر سے علاقے کا دیرینہ مطالبہ بھی پورا ہوگیا، وسائل کو جمع کرکے علاقوں میں ترقیاتی کام کروا رہے ہیں، انہو ںنے کہا کہ پانی و سیوریج کا مسئلہ ہمارا نہیں دوسرے ادارے کا ہے اسے بھی ہم ہی ٹھیک کرینگے اپنے لوگوں کو تکلیف میں نہیں دیکھ سکتے ، انہو ںنے کہا کہ کالا بورڈ میں سڑک نہ بننے کی وجہ واٹر بورڈ کی جانب سے تاخیر ہے،ملک ریاض نے آکر کہا کیا مدد کرسکتا ہوں دس ارب روپے کی اسکیموں کے لیے خود اعلان کیا تھا،بحریہ ٹائون کے ساتھ گیارہ لاکھ ٹن کچرا صاف کرنے کا ایم او یو سائن کیا ہے، ہم نے پہلا بجٹ پیش کیا ہے اس بجٹ کا ایک ایک پیسہ کراچی کے لوگوں کی امانت ہے ، کرپشن کو ختم کرنا ابھی مشکل ضرور ہے لیکن اسے ہر صورت ختم کریں گے، کرپشن میں کمی ضرور آئی ہے، ملک میں ستر سال سے کرپشن ہے مجھے فنڈ اور اختیارات نہیں دیئے جارہے، میرے افسران معطل ہیںکام میں مشکلات ہورہی ہیں، انہو ںنے کہا کہ شہر کو پھر سے بنا رہا ہوں، وزیر اعلیٰ سندھ شہر کا درد رکھتے ہیں ان کو مسائل بتا چکا ہوں،سندھ گورنمنٹ اتنے پیسے تو کے ایم سی کو دیں کہ تنخواہیں اور پنشن دے سکوں، بلدیہ عظمیٰ کراچی کے محکموں کی ریکوری بہتر ہوئی ہے لیکن اطمینان بخش نہیں ہے، سندھ فنانس کمیشن کی اب تک صرف ایک میٹنگ ہوئی ہے، میٹنگ بلاکر مسائل کو حل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ محکموں کو ٹھیک کررہا ہوں ، سارے محکمے خراب تھے افسران دیر سے دفتر آتے تھے ، سندھ حکومت کے پیسوں سے تنخوا ہیںاور پینشن دے رہے ہیں، وزیراعلیٰ سندھ سے درخواست ہے کہ وہ مجھے پیسے نہ دیں جوکام بتارہا ہوں وہ کردیں، وزیر اعلیٰ سندھ کو اپنی مجبوری سے آگاہ کردیا ہے، کورنگی،لانڈھی اور شہر کے دیگر علاقوں میں سیوریج کا بہت بڑا مسئلہ ہے ، واٹر بورڈ کے رویے سے لوگ تنگ آگئے ہیں ،انہو ںنے کہا کہ کورنگی میں تجاوزات ہورہی ہے۔تجاوزات کا خاتمہ کرکے دم لیں گے، ایک سوال کے جواب میں انہو ںنے کہا کہ ملیر کالابورڈ سے ملیر پندرہ تک کی سڑک ہماری وجہ سے نہیں بلکہ واٹر بورڈ کی وجہ سے نہیں بن رہی ،واٹر بورڈ اپنا کام کرلیں تو ملیر کالا بورڈ کی سڑک بن جائیگی، کالا بورڈ کی طرف واٹربورڈ کا مسئلہ ہے اب جب تک وہ مسئلہ حل نہیں ہوتا ہم کچھ نہیں کر سکتے ، میڈیا سے درخواست ہے کہ بلاجواز تنقید نہ کریں ، منفی خبریں نہ دیں۔ مثبت خبریں بھی دیں، اختیارات مل جائے تو میڈیا پھر مجھ سے سوال کرے، میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ میں کرپشن کے خاتمے کی فی الحال بات تو نہیں کرتا لیکن اسے ختم کرنے کی کوشش ضرور کروں گا ، انہو ںنے کہا کہ اس شہر میں رہنے والے سب ہمارے لوگ ہیں یہ شہر ہمارا ہے اسے ہم بنائینگے میڈیا نشاندہی کرے ہم کوشش کرینگے کہ مسائل جلد سے جلد حل ہوں، سندھ حکومت کوچاہیے کہ جرائم کے خاتمے کے لیے گلی محلوں میں پرانا انٹیلی جنس سسٹم نافذ کریں۔ عوام بھی اپنا بھر پور کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ شہر میں چھرا مار گروپ کی وجہ سے بچیاں اور وہ خواتین جو گھروں سے باہر جاتی ہیں خوف کا شکار ہیں،کراچی کی عوام آنکھیں کھلی رکھیں اگر چھرا مار شخص کو پکڑ سکتے ہیں تو وہ خود پکڑیں، انہوں نے کہاکہ جتنا بھی پیسہ ہمارے پاس ہے وہ سڑکوں، پارکوں، صفائی ستھرائی اور سیوریج کے نظام کو ٹھیک کرنے پر لگائیں گے، 2016-17 ء کا بجٹ ہم نے نہیں بنایا تھا، اس سال کا بجٹ منتخب بلدیاتی نمائندوں نے بنایا ہے، ایک ایک پیسہ کراچی پر لگائیں گے۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard